Saturday, December 10, 2022
HomeInternational newsروس نے یوکرین جنگ میں استعمال ہونے والی کلاشنکوف میں کیا تبدیلیاں...

روس نے یوکرین جنگ میں استعمال ہونے والی کلاشنکوف میں کیا تبدیلیاں کیں؟

روس نے یوکرین جنگ  میں استعمال ہونے والی کلاشنکوف اے کے 12  میں تبدیلیاں کی ہیں  تاکہ فائرنگ  کو تیز کیا جا سکے اور فوجیوں کو فائرنگ پر زیادہ کنٹرول حاصل ہو ۔

آر آئ سے بات کرتے ہوئے کلاشنکوف کنسرن کے صدر ایلن لشنیکوف نے کہا کہ اے کے 12 کی موڈیفیکیشن میں دو راؤنڈ برسٹ کٹ آف کو غیر فعال کر دیا جائے گا اور  فائرنگ کے طریقوں پر دو طرفہ کنٹرول کے ساتھ چیک ریسٹ (گال پر رائفل رکھنے کی جگہ) بھی شامل ہو گی۔

ان کے مطابق انہوں نے کم سے کم وقت میں اس کے تکنیکی حل منتخب کیےاور ایک پروٹو ٹائپ بنایا جس کا روسی وزارت دفاع کے نمائندوں نے جائزہ لیا۔‘

انہوں نے یہ نہیں بتایا کہ جدید ہتھیار کب باقاعدہ طور پر فوج کے حوالے کیے جائیں گے تاہم اس میں صرف اتنا کہا گیا کہ یہ ڈیزائن دستاویزات کے مرحلے میں ہے۔

کلاشنکوف کی تیار کردہ AK-12 اسالٹ رائفل کی کیلیبر 5.45 ملی میٹر ہے اور جس کو پرانے کے مقابلے میں بہتر سے بنایا گیا ہے کیوں کہ اس سے مسلح افواج کو مسائل کا سامنا کرنا پڑ رہا تھا۔ یاد رہے کہ 2014 میں کلاشنکوف بنانے والی کمپنی پر امریکہ نے پابندی عائد کی تھی کیوں کہ  روس نے کریمیا پر حملہ کر کے اس پر قبضہ کر لیا تھا۔

جبکہ یورپی یونین اور برطانیہ نے رواں سال یوکرین پر حملے کے بعد کلاشنکوف کنسرن پر پابندیاں عائد کی ہیں۔

RELATED ARTICLES

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

- Advertisment -

Most Popular