Sunday, December 4, 2022
HomeNational newsسیاسی رہنماؤں کی فوج کے خلاف ریمارکس

سیاسی رہنماؤں کی فوج کے خلاف ریمارکس

سیاسی قیادت نے وزیراعظم اور عدلیہ سے اس پر ایکشن لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

سیاسی قیادت کے ایک گروہ نے پی ٹی آئی کے ایک رہنما کے فوج مخالف ریمارکس پر سخت استثنیٰ لیا ہے اور وزیر اعظم اور عدلیہ سے اس پر ایکشن لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

اپنے ردعمل میں پی پی پی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ وہ وزیراعظم عمران خان، ان کی سوشل میڈیا ٹیم اور ایم این ایز کی پروپیگنڈا مہموں سے مطالبہ کر رہے ہیں کہ فوج کی غیر جانبداری پر تنقید نہ کی جائے۔ انہوں نے کہا، “اس کا نوٹس آئی ایس پی آر کے ذریعے لیا جائے یا ہماری عدلیہ کے ذریعے۔ ہم اس طرح کے پروپیگنڈے کو کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔” انہوں نے کہا کہ یہ ملک کے ہر ادارے کے لیے اپنے دائرہ کار میں رہ کر کام کرنے کی جدوجہد ہے۔

انہوں نے کہا کہ جب وہ وقت آ گیا ہے جب میڈیا غیر جانبدار ماحول کی بات کر رہا ہے، عمران اور ان کی سوشل میڈیا ٹیم یہ پروپیگنڈہ پھیلانے کی کوشش کر رہی ہے کہ ادارے غیر جانبدار نہیں ہیں، خواہ وہ اشتعال انگیزی کے ذریعے ہو یا آئینی بحران پیدا کر کے۔

پیپلز پارٹی کے سیکرٹری اطلاعات فیصل کریم کنڈی نے کنول شوزیب کی جانب سے فوج اور آئی ایس آئی کے خلاف ریمارکس پر نوٹس لینے کا بھی کہا۔ انہوں نے کہا کہ “انہیں خواتین کی مراد سعید کی طرح کام کرنے سے گریز کرنا چاہیے۔”

پی ایم ایل این کے رہنما ملک احمد خان نے بھی پی ٹی آئی کی سوشل میڈیا ٹیم پر کڑی تنقید کی۔ خان نے کہا کہ انہیں فوج کی شبیہ کو خراب کرنے کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔ فوج کو کوئی بھی خطرہ ملک کے لیے وجودی بحران کا باعث بنے گا۔ انہوں نے سوال اٹھایا کہ کیا فوج کا احترام نہیں کیا جائے گا اور کہا کہ صرف مضبوط فوج ہی مضبوط ملک کی ضمانت ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ آئین پر سختی سے عمل کیے بغیر ملک کیسے قائم رہ سکتا ہے۔ پی ایم ایل این کے رہنما نے کہا کہ ہر پاکستانی ملک کی ترقی اور سلامتی کے لیے اپنی جان قربان کرنے کے لیے تیار ہے۔

پی ایم ایل کیو کے سالک حسین نے بھی پاک فوج اور آئی ایس آئی کے خلاف سخت زبان استعمال کرنے پر پی ٹی آئی رہنما کے خلاف سخت تنقید کی۔ اپنے ردعمل میں حسین نے کہا کہ پاکستان آرمی کمانڈ اور آئی ایس آئی کے خلاف بے بنیاد الزامات لگانا ناقابل برداشت ہے۔ ایسے عناصر پر حکومت کرنے کے لیے وزیر اعظم کو کارروائی کرنی چاہیے ورنہ ہم جانتے ہیں کہ انہیں کیسے ہینڈل کرنا ہے۔

وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے پاک فوج پر تنقید کرنے والے سوشل میڈیا اکاؤنٹس کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ وہ جس چیز کی تشہیر کررہے ہیں، وہ پی ایم ایل این کی وجہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ وزیراعظم اور فوج کے درمیان دراڑ پیدا کرنے کی چال ہے جو کبھی نہیں ہو سکتی۔ انہوں نے کہا کہ ہم پختہ یقین رکھتے ہیں کہ فوج پاکستان کی علاقائی سالمیت کی ضامن ہے۔

RELATED ARTICLES

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

- Advertisment -

Most Popular