Saturday, November 26, 2022
HomeNational newsآئی جی پنجاب کے شہر میں پولیس کا اغوا، گاڑی چھیننے کی...

آئی جی پنجاب کے شہر میں پولیس کا اغوا، گاڑی چھیننے کی ایف آئی آر درج کرنے سے انکار

ابتدائی تحقیقات میں سب کچھ ثابت ہونے کے باوجود مقامی ایم پی اے کے دباؤ کے سامنے آکر لودھراں کے ڈی پی او نے مبینہ طور پر آٹھ روز قبل ہونے والے اغوا، تشدد اور گاڑی چھیننے کے واقعے کی ایف آئی آر درج کرنے سے انکار کر دیا۔

شکایت کنندہ راؤ اشرف نے الزام لگایا ہے کہ ڈی پی او عبدالرؤف قیصرانی نے ایک مقامی ایم پی اے کی موجودگی میں کہا تھا کہ جو کرنا ہے کرو۔ میں واقعے کی کوئی ایف آئی آر درج نہیں کروں گا۔‘‘ ان کا مزید کہنا تھا کہ وہ اس حقیقت کے بارے میں جانتے ہیں کہ کار چھیننے کا واقعہ حقیقی تھا لیکن وہ ایف آئی آر کے لیے نہیں جائیں گے۔

15 مارچ 2022 کو موٹر سائیکل پر سوار پانچ افراد نے ایک اشرف کی کار کو اس وقت روکا جب وہ اپنے کزن کے ساتھ عدالت جا رہا تھا۔ ملزمان نے متاثرہ کو خوب مارا پیٹا، اس کے کپڑے پھاڑ دیے اور گاڑی چھین لی۔ انہوں نے متاثرہ کے کزن کو گھر جانے دیا۔ تاہم وہ اشرف کو اغوا کر کے ایک سنسان جگہ لے گئے۔

متاثرہ کے بھائی نے مدد کے لیے ریسکیو 15 کو کال کی۔ سٹی لودھراں پولیس نے کال پر کارروائی کرتے ہوئے مقتول کو بازیاب کرالیا۔ تاہم، پولیس نے ایس ایچ او پی ایس سٹی لودھراں مزمل کو معلوم وجوہات کی بنا پر گاڑی برآمد کرنے میں ہچکچاہٹ کا مظاہرہ کرنا شروع کر دیا۔ ایس ایچ او نے مبینہ طور پر ڈی پی او کو واقعے کی غلط اطلاع بھی دی، یہ کہتے ہوئے کہ شکایت کنندہ نے رقمی تنازعہ کے خلاف سیکیورٹی کے طور پر خود کار ملزم کو دی تھی۔ واقعے کے دن صبح 6 بجے ملزمان کی جانب سے دائر درخواست کے ذریعے ’رچی ہوئی سازش‘ کا پردہ فاش کیا گیا۔ متاثرہ نے اگلے روز ڈی پی او سے رابطہ کیا اور واقعہ کو تفصیل سے بیان کیا۔

ڈی پی او نے کارروائی کرتے ہوئے ایس ایچ او کو آدھے گھنٹے میں گاڑی برآمد کرنے کی ہدایت کی۔ ایس ایچ او نے ایک بار ریکوری میں تاخیر کی۔ متاثرہ شخص نے ڈی پی او کو بتایا کہ ایس ایچ او گاڑی برآمد کرنے پر آمادگی ظاہر نہیں کر رہا جس پر ڈی پی او نے ایس ایچ او کو سرزنش کرتے ہوئے گاڑی واپس لینے کو کہا۔ آخر کار گاڑی برآمد کر کے تھانے میں کھڑی کر دی گئی۔ ڈی پی او نے ایس ایچ او کو ہدایت کی تھی کہ دونوں فریقین کو بلایا جائے اور الزام ثابت ہونے پر ملزمان کے خلاف کارروائی کی جائے۔ ایس ایچ او شکایت کنندہ کو بار بار تھانے میں بلاتا رہا لیکن اس نے مبینہ طور پر کبھی بھی ملزم کو تفتیش میں شامل ہونے کو نہیں کہا۔ متاثرہ نے انسپکٹر جنرل کے شکایتی مرکز 1787 پر بھی بار بار کال کی اور کمیونیکیشن آفیسر کو ایف آئی آر کے اندراج میں تاخیر کے بارے میں بتایا۔

ڈی پی او آفس نے آئی جی کے شکایتی مرکز سے ہدایات ملنے کے بعد شکایت کنندہ کو گزشتہ جمعہ کو ڈی پی او کے سامنے پیش ہونے کے لیے بلایا۔ متاثرہ خاتون صبح ڈی پی او آفس پہنچی۔ مقامی ایم پی اے کے آنے تک انہیں گھنٹوں پولیس اسٹیشن میں انتظار میں رکھا گیا۔ ایم پی اے نے ڈی پی او سے ملاقات کی تو شکایت کنندہ کو بھی بلایا گیا۔

جیسا کہ شکایت کنندہ نے ذاتی سماعت دینے اور جرم ثابت ہونے پر ان کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کی درخواست کی، ڈی پی او نے مبینہ طور پر ایف آئی آر درج کرنے سے صاف انکار کردیا۔ انہوں نے کہا کہ وہ ڈی ایس پی سٹی سے کہیں گے کہ وہ دونوں فریقین کو سنیں اور اس معاملے کا میرٹ پر فیصلہ کریں۔ شکایت کنندہ نے دی نیوز کو بتایا کہ وہ گزشتہ تین دنوں سے ڈی ایس پی آفس کے چکر لگا رہے ہیں لیکن کوئی بھی ان کی درخواست پر توجہ نہیں دے رہا۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ ایس ایچ او ملزمان کے ساتھ دستانہ ہے جبکہ مقامی ایم پی اے بھی مبینہ طور پر انصاف کی راہ میں رکاوٹ بن چکے ہیں۔ ایس ایچ او سٹی لودھراں مزمل نے دی نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ دونوں فریقین میں مالی تنازعہ ہے۔ اس سوال پر کہ کیا کوئی شخص کسی کے ساتھ مالیاتی تنازعہ پر کوئی غیر قانونی اقدام کرسکتا ہے، وہ کوئی تسلی بخش جواب دینے میں ناکام رہا۔

ڈی پی او عبدالرؤف قیصرانی نے ایم پی اے کی مداخلت کے الزام کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ معاملے کو میرٹ پر دیکھا جا رہا ہے۔ جب ان سے پوچھا گیا کہ انہوں نے شکایت کنندہ کو ایم پی اے کی موجودگی میں یہ کہنے کی ضرورت کیوں محسوس کی کہ وہ کسی قیمت پر ایف آئی آر درج نہیں کریں گے تو ڈی پی او نے کہا کہ وہ اس نمائندے کو وضاحت دینے کے پابند نہیں ہیں۔ ایک اور سوال کے جواب میں کہ ایس ایچ او وقوعہ کے دن سے ان سے غلط رپورٹنگ کر رہا ہے، انہوں نے کہا کہ وہ اس معاملے کو میرٹ پر دیکھیں گے۔ دی نیوز نے مقامی ایم پی اے سے بھی رابطہ کرنے کی کوشش کی لیکن ان کے دونوں نمبروں سے کوئی جواب نہیں دے رہا۔

RELATED ARTICLES

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

- Advertisment -

Most Popular