Sunday, December 4, 2022
HomeNational news'میں حکومتیں بنانے، توڑنے اور ڈیل کرنے میں ماہر ہوں': خٹک کا...

‘میں حکومتیں بنانے، توڑنے اور ڈیل کرنے میں ماہر ہوں’: خٹک کا دعویٰ ہے کہ 15 اپوزیشن اراکین حکومت کی حمایت کر رہے ہیں

وفاقی وزیر دفاع پرویز خٹک نے ہفتہ کو اپوزیشن جماعتوں سے 15 قانون سازوں کو نکالنے کا دعویٰ کرتے ہوئے کہا کہ اتحادی حکومت کے خلاف تحریک عدم اعتماد کو شکست دینے کے لیے ڈٹے رہے۔

انہوں نے مانکی شریف اور پیرپائی کے علاقے سادو خیل میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مجھے اپوزیشن جماعتوں کی جانب سے 15 اراکین قومی اسمبلی کی حمایت کی یقین دہانی ملی ہے اور جس دن نمبر گیم شروع ہوگی میں انہیں حکومت کی طاقت دکھاؤں گا۔ انہوں نے کہا کہ جس دن قومی اسمبلی میں تحریک عدم اعتماد پیش کی جائے گی اس دن اپوزیشن کے 15 سے زائد ارکان “لاپتہ” ہو جائیں گے۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ جب اپوزیشن وزیراعظم عمران خان کے خلاف پارلیمنٹ میں تحریک عدم اعتماد پیش کرے گی تو انہیں “شرمندگی” کا سامنا کرنا پڑے گا۔

پرویز خٹک نے کہا کہ بطور سیاستدان وہ اچھی طرح جانتے ہیں کہ حکومتیں کیسے بنتی ہیں یا توڑی جاتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر اپوزیشن جماعتیں منفی ہتھکنڈوں کے ذریعے پی ٹی آئی کے دو ارکان پارلیمنٹ کی حمایت حاصل کر لیتی ہیں تو وہ روایتی حربوں کے ذریعے ان کے عہدے کو تباہ کرنے اور سیاسی طور پر فائل کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں، کیونکہ وہ سیاسی چال چلانے کے ماہر تھے۔

خٹک نے اپوزیشن کے اس دعوے کو مسترد کر دیا کہ ٹریژری بنچ کے 10 ارکان نے وفاداریاں تبدیل کی ہیں اور وہ پاکستان تحریک انصاف کی زیر قیادت حکومت کے خلاف عدم اعتماد کے اقدام کے حق میں ووٹ ڈالیں گے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت کے خلاف اپوزیشن کا عدم اعتماد کا اقدام ڈرامہ ہے اور وہ صرف میڈیا میں زندہ رہنا چاہتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اپوزیشن جماعتیں کنفیوز اور بے سمت ہیں اور وہ حکومت کو کیسے نکال سکیں گی۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان مسلم لیگ نواز، پاکستان پیپلز پارٹی اور دیگر جماعتیں عوام کا اعتماد کھو چکی ہیں اور اب میڈیا میں رہنے کے لیے ڈرامے کر رہی ہیں۔

پرویز خٹک نے کہا کہ ملک کو تاریخ میں پہلی بار عمران خان کی شکل میں ایماندار وزیر اعظم ملا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم ملک کو معاشی بحران سے نکالنے، بدعنوانی کے خاتمے اور عام آدمی کا معیار زندگی بلند کرنے کے لیے کوششیں کر رہے ہیں۔

وزیر دفاع نے دعویٰ کیا کہ وزیراعظم کا دورہ روس علاقائی ممالک کے ساتھ دوطرفہ تعلقات اور تجارت کو فروغ دینے کے لیے سود مند ثابت ہوا۔

انہوں نے کہا کہ پی ایم ایل این اور پی پی پی کی سابقہ ​​حکومتوں میں پھیلی ہوئی کرپشن نے ملکی معیشت کو زبردست نقصان پہنچایا جس کی وجہ سے عوام اب مہنگائی اور بے روزگاری کا شکار ہیں۔

انہوں نے پی ایم ایل این اور پی پی پی کو موجودہ مہنگائی، بے روزگاری، گرتی ہوئی معیشت اور ملک پر غیر ملکی قرضوں کے بوجھ کا ذمہ دار ٹھہرایا۔

پرویز خٹک نے کہا کہ گزشتہ حکومتوں کی ناقص پالیسیوں کی وجہ سے ملک کو قیمتوں میں اضافے اور مالی بحران کے چیلنجز کا سامنا ہے۔ انہوں نے پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کے رہنماؤں پر ان کے دوہرے معیار اور کھوکھلے نعروں سے عوام کو دھوکہ دینے پر تنقید کی۔ انہوں نے کہا کہ پی ڈی ایم اپنے ہی لیڈروں کو بچانے کی کوشش کر رہی ہے اور وزیر اعظم عمران خان کو بلیک میل کر رہی ہے تاکہ احتساب کے عمل کو روکا جا سکے، جس کا آغاز اس نے ان لوگوں کے احتساب کے لیے کیا، جنہوں نے قومی دولت لوٹی تھی۔

بلدیاتی انتخابات کے بارے میں پرویز خٹک کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی نے خیبرپختونخوا کی تمام نشستوں پر اپنے امیدوار کھڑے کیے تھے جو دوسرے مرحلے کے انتخابات میں حریفوں کو بڑے مارجن سے شکست دینے کی صلاحیت رکھتے تھے۔

انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کے امیدوار کارکردگی اور گڈ گورننس کی بنیاد پر بلدیاتی انتخابات میں کلین سویپ کریں گے۔

RELATED ARTICLES

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

- Advertisment -

Most Popular